“موجودہ حکومت نے آرمی چیف لگایا تو تنازع 3 سال جاری رہے گا، جنرل باجوہ سے تعلقات خراب نہیں ہوئے” فواد چوہدری کا تہلکہ خیز بیان

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن) پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے سینئر نائب صدر فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف نے پنڈی کو بتادیا ہے کہ اگر موجودہ حکومت نئے آرمی چیف کی تعیناتی کرے گی تو پھر تنازع اگلے تین سال جاری رہے گا، جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ تعلقات تحریک انصاف کی حکومت کے خاتمے کے بعد بھی خراب نہیں ہوئے۔

نجی ٹی وی ہم نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ  ہم نے پنڈی کے تحفظات  ختم کرنے کی کوشش کی ہے، ہم تنازع ختم کرنا چاہتے ہیں، حکومت سے کہا ہے کہ مل بیٹھ کر مسئلے کو حل کریں،  ہم نے پنڈی کو بتایا ہے آرمی چیف یہ حکومت لگائے گی تو تنازع  تین سال رہے گا، اگر تنازع ختم کرنا ہے تو پھر الیکشن تک ریٹائرمنٹ موخر کردیں۔

انہوں نے کہا کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کے ساتھ تعلقات تحریک انصاف کی حکومت ختم ہونے کے بعد بھی خراب نہیں ہوئے، 25مئی کے معاملات کے بعد اسٹیلبشمنٹ سے ہمارے کچھ تعلقات خراب ہوئے ہوں گے۔ یہ چاہتے ہیں کہ عمران خان کو نااہل کر دیا جائے،آپ عمران خان کو کس قانون کےتحت نااہل کریں گے؟ فوری انتخابات ہی تمام مسائل کا حل ہیں۔

دوسری جانب نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے فواد چوہدری نے کہا کہ اگر یہ سمجھتے ہیں کہ یہ عمران خان کو نااہل کر کے الیکشن جیت جائیں گے،تو ان کی غلط فہمی ہے،نااہلی کی صورت میں پارٹی تین چوتھائی اکثریت سے جیت کر آۓ گی اور سب سے پہلا کام عمران خان کو لانے کا کرے گی، ان کی تھیوریاں چلنے والی نہیں ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مریم صفدر، خرم دستگیر اور جاوید لطیف جیسے لوگ مُسلسل بیانیہ بنانے کی کوشش میں ہیں کہ پنڈی والے ہمیں زبردستی لے کر آۓ اور سخت فیصلے کرواۓ،اس لئے اب ہم الیکشن جیتنے کی پوزیشن میں نہیں ہیں ۔ حالانکہ ان کی غیر مقبولیت کی سب سےبڑی وجہ سازش سے اقتدار میں آنا ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں