پسند کی شادی جرم بن گئی- ماں بیٹی قتل

#ظالم کی کوئی برادری نہیں ہے😪#فی الفور فرعونوں کی بدمعاشی کو دریا برد کیا جائے انصاف کے کٹہرے میں لایا جائے نامزد ظالم درندوں کو بھی سرعام گو لی مار دی جائے سانحہ حویلی کافی الفور نوٹس لیاجائےظالموں کے خلاف قانونی کارروائی کی جائےحویلی کی پر امن فضا کو ایک بار پھر تصادم کی طرف دھکیل دیا گیا ماں بیٹی دونوں کو پھانسی کے پھندے پر چڑھا دیا گیا!!تفصیلات کے مطابق تین ماہ پہلے گجر کا لڑکا اور راٹھور برادری کی لڑکی نے باہمی رضامندی سے کورٹ میرج کر لیا ۔لڑکی کے خاندان کی طرف سے دھمکیوں کی وجہ سے دونوں پاکستان میں روپوش ہو گے ایف آئی آر بھی درج کروائی گئی اور پولیس سے ڈرایا دھمکایا بھی جارہا تھا ۔اور لڑکے کے گھر میں بہت دفعہ حملے کیے گے پولیس کے موجودگی میں۔آج رات کو اپر گگڈار انکے گھر پر لڑکی کے خاندان کے کچھ لوگوں نے حملہ کیا اور گن پوائنٹ پر لڑکے کی ماں اور بیٹی کو زیادتی کے بعد انکے گھر کے صحن میں موت کے پھندے پر چڑھا دیا ۔اور ایک چھوٹے بچے کو ساتھ لے گے جو ابھی تک بازیاب نہ ہوسکا ۔پورے ضلع میں احتجاج جاری ۔ کہوٹہ شہر کے داخلی اور خارجی راستے مظاہرین نے قاتلوں کی گرفتاری تک بلاک کر دیے ہیں۔حویلی میں گجر برادری غم سے نڈھالظالمو ان دونوں ماں اور بیٹی کا کیا قصور تھا؟

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں