تھانہ چوکی سماہنی میں جنر ل ہولڈ اپ کے دوران جرنل خان پر پولیس تشدد لاٹھی چارج

سماہنی پونا(راشدراجؔ سے)پولیس تھانہ چوکی سماہنی میں جنر ل ہولڈ اپ کے دوران جرنل خان پر پولیس تشدد لاٹھی چارج ،سول کمیونٹی کا پولیس کارروائی کے خلاف احتجاج، لاٹھی چارج اور تشدد کس بنیاد پر کیا گیا ملوث اہلکاروں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جائے شب برات کے روزسب ڈویژن سماہنی کے تجارتی مرکز چوکی میں جنر ل ہولڈ اپ کے دوران موٹر سائیکل کی کاپی،ہلمٹ پاس نہ رکھنے پر دوران پوچھ گچھ مبینہ تلخ کلامی کی پاداش پر پولیس،جوانوں کے ہاتھوں تشدد کا نشانہ بننے والے جرنل خان اور اس کے والد ولی خان​​​​​​​کی سوشل میڈیا پر ویڈیو وائرل ہوئی جرنل خان نے پولیس پر الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ مجھے ناکے پر روکا گیا میرے پاس صرف سو روپیہ تھا میں نے کہا موٹر سائیکل کی کاپی بازار میں د کان پر ہے پولیس کے جوانوں نے گالیاں دیتے ہوئے تشدد کرنا شروع کر دیا مکوں اور گھسونوں سے نشانہ بنایا گیا جس پر بے ہوش ہو گیا تشدد کا نشانہ بننے والے جرنل خان کے والد دین بادشاہ نے اپنے موقف میں کہا کہ موٹر سائیکل کے کاغذات مکمل ہیں میں نے تشدد کرنے کی وجہ پوچھی تو پولیس والوں نے مجھے گالیاں دیں تشدد کیا کپٹرے پھاڑ ڈالے سونا ویلی گڑھا وینساں میں مقیم شہری پر پولیس تشدد پر تاجران تھانہ پہنچ گئے احتجاج ریکارڈ کروایا وقوعہ کے خلاف شہریوں کی جانب سے احتجاج انجمن تاجران چوکی کی جانب سے معاملہ پر اجلاس پولیس رویے پر اعلی احکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے ادھر لاٹھی چارج کے دوران بے ہوش ہونے والے زخمی شہری کو پرائیویٹ ہسپتال سے طبی امداد مہیا کر دی گئی ادھر تھانہ پولیس نے معاملہ پر اپنے موقف میں کہا کہ کے پھٹان آپس میں گتھم گتھا ہوئے پولیس نے کسی پر کوئی تشدد نہیں کیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں