باغ قبضہ مافیا بے لگام پٹوار خانہ کے رقبہ پر قبضہ کی کوشش

باغ (گل نواز خان سے) پٹوار خانہ کے رقبہ پر قبضہ کی کوشش، اسسٹنٹ کمشنر پر قاتلانہ حملہ ضلعی انتظامیہ نے ملزمان کو گرفتارکر کے قبضہ کی کوشش ناکام بنا دی،تفصیلات کے مطابق باغ گیاری چوک پر ملحقہ رقبہ خالصہ سرکار پر ضلعی انتظامیہ نے عارضی کنٹینر رکھ کر پٹوار خانہ قائم کیا ہوا تھا،اب اس رقبے پر ضلعی انتظامیہ کی نگرانی میں پٹوار خانہ کی پختہ تعمیر کا کام جاری تھا،کہ مبینہ طور پر ملکیتی رقبہ کا دعویٰ کر کے عباس شاہ،اورسابق ایڈمنسٹریٹر میونسپل کارپوریشن نسیم شاہ نے موقع پر پٹوار خانہ کی​​​​​​​ تعمیراتی کام روک کر مزدوروں کو موقع سے بھگا دیا، اے سی یاسر محمود اطلاع ملنے پر موقع پر پہنچے،عباس شاہ نامی شخص نے اسسٹنٹ کمشنر پر قاتلانہ حملہ کر دیا، اور پسٹل تان لیا،مقامی پولیس نے ملزمان کو گرفتارکر لیا،ملزمان رقبہ کو دادا وارثت بیان کرتے ہوئے مبینہ طور پر مقامی وزیر کی سرپرستی میں رقبہ پر قبضہ کا الزام لگایا،جبکہ اسسٹنٹ کمشنر یاسر محمود کے مطابق یہ لینڈ مافیا اور مافیا کے گروہ کے سرغنہ ہیں قانون کی رٹ کو چیلنج کر کے اربوں روپے کی مفاد سرکار میں استعمال ہونے رقبہ پر مداخلت اور قبضہ کی کوشش کر رہے ہیں،جان کی پرواہ نہیں ،انہوں نے کہا کہ ایک ایک انچ سرکاری رقبہ کی حفاظت کریں گے ملزمان کو گرفتارکر کے ایف آئی آر درج کر دی ہےمافیا ضلعی انتظامیہ کو دباؤ میں لانے کے لیے اسسٹنٹ کمشنر باغ کے تبادلے کے لیے متحرک ،عوامی حلقوں نے اسسٹنٹ کمشنر پر قاتلانہ حملہ کی مذمت کرتے ہوئے وزیراعظم،چیف سیکرٹری،کمشنر پونچھ سے مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ گیاری چوک پر ہی اربوں روپے کی اراضی قبضہ مافیا سے واگزار کروا کر مفاد سرکار کے استعمال میں لائی جائے،ایک اور واقعہ میں بائی پاس نادرا آفس کے ساتھ اتوار کی چھٹی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے شاہرات رولز کی خلاف ورزی کرتے ہوئے قبضہ کی کوشش کو اسسٹنٹ کمشنر باغ یاسر محمود،تحلصیدار باغ نے پولیس نفری کے ہمراہ ناکام بنا کر موقع پر کام روکوا دیا،جبکہ رقبہ کی ملکیت کے دعوے دار گروہ نے پتھر رکھ کر بائی پاس روڑ کو بند کر دیا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں