سرکاری ملازمین کے لیے بری خبر آگئی

اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )وفاقی حکومت نے تمام سرکاری ملازمین وافسران کو نجی کاروبار، تجارتی معاملات اور ذاتی کنسلٹینسی خدمات فراہم کرنے کے کام سے فوری روک دیا گیا۔نجی نیوز چینل جیو کے مطابق وفاقی حکومت کے حکم پر اسٹبلشمنٹ ڈویڑن نے اپنی ہدایات میں کہاکہ جو سرکاری ملازمین احکامات کی خلاف ورزی میں ملوث پائے گئے ان کے خلاف گورنمنٹ سرونٹس کنڈیکٹ رولز 1973 کے تحت مس کنڈکٹ کی کارروائی ہوگی۔وفاقی حکومت نے گورنمنٹ سرونٹس کنڈیکٹ رولز 1964 کے تحت ہدایات جاری کرتے ہوئے وفاقی سرکاری ملازمین کو ہرقسم کے پرائیویٹ بزنس,تجارتی روابط اور ذاتی کنسلٹینسی کی خدمات کے کام سے روک دیا ہے۔ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن کے مطابق ہدایات پر سختی سے عمل درآمد کیا جائے گا اور وزارتوں ، متعلقہ محکموں اور اداروں سے ماہانہ بنیادوں پر ہدایات پر عمل درآمد کی رپورٹ لی جائے گی جب کہ ان پر عمل نہ کرنا مس کنڈکٹ کے مترادف ہوگا اور خلاف ورزی پر گورنمنٹ سرونٹس رولز 1973 کے تحت بھی مس کنڈکٹ کی کارروائی عمل میں لائی جاسکے گی

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں