دو عالمی طاقتوں نے ایک دوسرے کو قابو کرنے کے لئے کورونا وائرس پھیلایا، تشویشناک دعویٰ سامنے آگیا

لاہور(تازہ ترین اخبار-27مارچ2020ء) چین سے شروع ہونے والے کورونا وائرس نے اب پوری دنیا میں تباہی مچائی ہوئی ہے جس کے بعد اس کی تباہی کا سلسلہ جار ی ہے۔ کورونا وائرس نے اس وقت امریکہ تک کو اپنی لپیٹ میں لیا ہوا ہے جس کے بعد اب تک امریکہ میں متاثرہ افراد کی تعداد 85 ہزار کے قریب ہو گئی ہے جبکہ 1300 افراد ابھی تک ہلاک ہو چکے ہیں۔ اسی وبا کے بارے میں بات کرتے ہوئے تجزیہ نگار مبشر لقمان نے انکشاف کیا ہے کہ ممکن ہےکہ چین نے مغرب ممالک پر قابوپانے کے لئے اس وبا کو پھیلایا ہو۔بات کرتے ہوئے ان کا کہنا تھا کہ یہ کیسے ممکن ہے کہ وائرس کے پھیلتے ہی چین نے وہان کے داخلی اور خارجی راستے بند کر دیئے، دوسرے شہروں میں جانے نہیں دیا گیا۔ جبکہ دوسری جانب شہریوں کو امریکہ،ا یران اور دوسرے ممالک میں جانے دیا گیا۔

بات کرتے ہوئے مبشر لقمان نے ایک رپورٹ پیش کی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ دنیا بھر کی اسٹاک ایکسچینج کی مارکیٹ گر گئی ہے جس سےامریکہ تک کی معیشت کو نقصان ہوا ہے، لیکن چین کی اسٹاک مارکیٹ کو اس وباکے پھیلنے کے باوجود فرق نہیں پڑا، نہ ہی کسی چینی کمپنی کو نقصان ہوا، نقصان ہوا تو دوسرے ممالک کی کمپنیوں کو ہوا ہے۔بات کرتے ہوئےتجزیہ نگار نے اپنی ویڈیو میں بتایا ہے کہ امریکی کمپنیون کے شیئرز ان کی تاریخ کی نچلی سطح پر آگئے ہیں جبکہ چین کی ملٹی نیشنل کمپنیوں کو بالکل فرق نہیں پڑا۔ جیسے ہی وبا دنیا میں پھیل گئی، ساتھ ہی چین نے وائرس کی ویکسین بھی تیار کر لی۔ یوں محسوس ہوتا ہے کہ جیسے چین نے یہ وبا خو د پھیلائی تھی تا کہ وہ مغرب پر قابو پا سکے۔چینی صدر کے بارے میں بات کرتے ہوئے مبشر لقمان کا کہنا تھا کہ یہ کیسے ممکن ہے کہ دنیا بھر میں لوگ ایک دوسرے کو چھونے سے متاثر ہو رہے ہیں جبکہ چینی صدر اگر کسی بیمار کو ملنے جاتے ہیں تو بس ایک کپٹرے کا ماسک استعمال کرتے ہیں۔ ان تمام عناصر کو دیکھا جائے تو یوں محسوس ہوتا ہے جیسے کہ دو عالمی طاقتوں نے ایک دوسرے کو قابو کرنے کے لئے یہ وبا پھیلائی ہے جس کے نتیجے میں دیگر ممالک بھی متاثر ہو رہے ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں