ڈی ایچ اوآفس کوٹلی میں کوروناوائرس اور صحت کے مسائل پرسمینارکا انعقاد،ڈی ایچ اوکوٹلی ڈاکٹرشفقت شاہ،ڈاکٹرنصراللہ اور ڈاکٹرسلیم سمیت ضلع بھرسے ڈاکٹرزکی بھرپورشرکت

کوٹلی(اے جے کے نیوز)ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفس کوٹلی میں کوروناوائرس اورصحت کے مسائل کے متعلق سمینارکا انعقاد،جس میں ڈسرکٹ ہیلتھ آفیسرڈاکٹرشفقت شاہ،ایم ایس کوٹلی ڈاکٹرنصراللہ،میڈیکل سپیشلسٹ ڈاکٹرسلیم،ضلع بھرسے ڈاکٹرزاورلیڈی ڈاکٹرزنے شرکت کی ۔ تقریب سے ڈی ایچ اوکوٹلی ڈاکٹرشفقت شاہ،ایم ایس ڈی ایچ کیوہسپتال کوٹلی ڈاکٹرنصراللہ نے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ضلع بھر میں تمام ڈاکٹرزاپنے فراءض بخوبی سرانجام دے رہے ہیں ۔ تمام ڈاکٹرزجذبہ انسانیت کے جذبہ سے سرشارہوکرعوامی خدمت کررہے ہیں ۔ تمام ترمسائل کوحل کرنے کی کوشش کی جارہی ہے ۔ ہماری بھی کوشش ہوتی ہے کہ مریض کابروقت علاج کیاجائے کیونکہ مریض اللہ پاک کی ذات کے بعدڈاکٹرہی کواپنامسیحاسمجھتاہے ۔ ڈی ایچ کیوہسپتال ہویاڈی ایچ اوآئے ہوئے مریضوں کابروقت علاج ہونے پرہم اپنے آپ کوسرخروسمجھتے ہیں ۔ آج ڈاکٹرزکی ایک اچھی ٹیم موجودہے ۔ اسوقت ڈی ایچ کیوہپستال کوٹلی میں تین اضلاع کابیک وقت بوجھ ہے اس میں ہماری کوشش ہے کہ ہم تمام مریضوں کوسہولیات مہیاکریں ۔ دونوں مقررین نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ اس وقت کوروناوائرس نے متعددانسانی جانوں کا اپنالقمہ بناڈالاہے ۔ عوام بھی اس وائرس سے بچنے کیلئے احتیاطی تدابیراختیارکریں ۔ ہمارے دروازے عوام کیلئے ہمیشہ کھلے ہوئے ہیں ،ہم یہاں عوامی خدمت کیلئے بیٹھے ہوئے ہیں ۔ تقریب سے کوروناوائرس پرمیڈیکل سپیشلسٹ ڈاکٹرسلیم نے مفصل گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ کوروناوائرس نہایت ہی خطرناک وائرس ہے،جس نے چین جیسے ترقی یافتہ ملک کواپنی لپیٹ میں لے لیاہے ۔ الحمداللہ ہم مسلمان ہیں اوراحتیاطی تدابیراختیارکرکے ہم اس وائرس سے بچ سکتے ہیں ۔ انہوں نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہاتھ صابن سے دھونے کویقینی بنائے،ویسے بھی صفائی نصف ایمان ہے،واش روم یاکھانے کے پہلے اوربعد میں ہاتھ دھوناسنت نبویﷺ ہے اوراس سے بھی ہم اس وائرس سے بچ سکتے ہیں ۔ ٹشوپیپرکوکسی فرش میں پھینکنے کے بجائے ڈسٹ بین پرپھینکیں ۔ سزباں اورپھل فروٹ کا استعمال کریں ،مصالحہ داراورفرائی فوڈکھانے سے پرہیزکریں ،تھوڑاتھوڑاپانی پیتے رہے ۔ میڈیکل سپیشلسٹ ڈاکٹرسلیم نے کہاکہ کوروناوائرس کی مختلف علامات ہیں ،جن میں سانس کے مسائل،بخار،کھانسی،نمونیہ،سردرد،گلہ خراب ہونا،فلووغیرہ ایسی صورتحال میں فوری طورپرڈاکٹرسے رابطہ کریں ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں