حلقہ چڑہوئی سے لیگی ٹکٹ ہولڈرپرمثبت تنقیدکیاہوئی،ان کے مالشیوں نے کارکنان کی پگڑیاں اچھالناشروع کردیں ،ٹکٹ ہولڈر حقیقی معنوں میں آج عوامی فلاح وبہبودکے کام کریں انکے حق میں بھی لکھیں گے ، کارکنان مسلم لیگ ن اوورسیز

برطانیہ(اے جے کے نیوز)مسلم لیگ ن اوورسیزکے کارکنان حلقہ چڑہوئی کے ٹکٹ ہولڈرکیخلاف پھٹ پڑے ۔ حلقہ چڑہوئی سے ٹکٹ ہولڈرنے آٹھ یونین کونسلزکو چھوڑ کر اپنے دوعزیزایک جومحکمہ صحت کاملازم اوردوسرا محکمہ برقیات کاملام ہے ترجمان رکھے ہوئے ہیں ۔ ان کارکنان کوآپ نے نظراندازکردیاجنہوں نے ہرمشکل وقت میں آپ کاساتھ دیا،اپنے عزیزواقارب ،دوست احباب کھوئے،بلکہ بہت سے لوگوں کی ناراضگیاں مول لیں آج ان کارکنان کی پگڑیاں اچھالی جارہی ہیں آپ سے یہ امیدنہیں تھی ۔ آپ تو دوسروں کو عزت دلانے آئے تھے آپ تو بدمعاشی کے خلاف تھے آپ تو اپنوں کو نوازنے کے خلاف تھے لیکن آپ نے یہ ساری بیماریاں اپنے گھر میں ہی پال لی ہیں اب تو آپ کے عزیز و اقارب لوگوں کو دھمکیاں دیتے ہیں آپ کے زیر سایہ اپنوں کو نوازا بھی جا رہا ہے آپ کے امن پسندی کے دعوے بھی دم توڑ گئے ہیں میرٹ کا جنازہ بھی بڑی دھوم سے پچھلے ساڑھے تین سال سے نکلا ہے ۔ ان خیالات کا اظہارمسلم لیگ ن اوورسیز کے کارکنان نے کیا ۔ مسلم لیگ ن اوورسیزکے کارکنان نے کہاکہ ہماراحلقہ چڑہوئی ہے ہم اپنے گھرسے دوریہاں روزی روٹی کمانے آئے ہیں ،جماعت کیلئے ہماری خدمات ہیں ۔ ہم نے مسلم لیگ ن کے حلقہ چڑہوئی سے ٹکٹ ہولڈرکابھرپورساتھ دیا،ہم نے میرٹ کی کیابات کی کہ ان کے مالشی ،پالشی ہماری پگڑیاں اچھالنے لگے ہیں ۔ الیکشن صرف گھرکے افراداورمخصوص لوگوں کی بنیادپرلڑانہیں جاسکتایہ ہم لوگ آپ کے ساتھ تھے توآپ کی ضمانتیں ضبط نہیں ہوئی ۔ مسلم لیگ ن اوورسیزکے کارکنان نے مزیدکہاکہ سیاست خدمت کا دوسرا نام ہے لیکن اس سیاست کو گالی بنانے کا سہرا بھی تاریخ حلقہ چڑہوئی کے ٹکٹ ہولڈ رکے نام لکھے گی آپ نے حلقے کی آٹھ یونین کونسلز کو چھوڑ کر اپنے دو عزیزوں ایک جو محکمہ صحت اور دوسرا محکمہ برقیات کا ملازم ترجمان رکھے ہوئے ہیں جو دن کو میٹنگیں کرتے ہیں کہ لوگوں کو بلکہ ان لوگوں کو جنہوں نے آپ کے ساتھ چل کر اپنے عزیز و اقارب کھوئے، دوست احباب کھوئے بلکہ بہت سے لوگوں کی ناراضگیاں مول لیں ان کو رسوا کیسے کیا جائے ان کی پگڑیاں اچھالی جائیں آپ سے ایسی توقع تو حلقے کے لوگ نہیں کرتے تھے ۔ آپ تو کرپشن کے خلاف سیاست میں آئے تھے ۔ آپ تو میرٹ کی پامالی کے خلاف میدان میں آئے تھے ۔ آپ تو امن پسند لگتے تھے آپ تو دوسروں کو عزت دلانے آئے تھے آپ تو بدمعاشی کے خلاف تھے ۔ آپ تو اپنوں کو نوازنے کے خلاف تھے لیکن آپ نے یہ ساری بیماریاں اپنے گھر میں ہی پال لی ہیں اب تو اپ کے عزیز و اقارب لوگوں کو دھمکیاں دیتے ہیں آپ کے زیر سایہ اپنوں کو نوازا بھی جا رہا ہے آپ کے امن پسندی کے دعوے بھی دم توڑ گئے ہیں میرٹ کا جنازہ بھی بڑی دھوم سے پچھلے ساڑھے تین سال سے نکلا گیاہے، پگڑیاں بھی دھوم دھام سے اچھالی جا رہی ہیں ۔ کرپشن کا شور شرابہ پہلے کی نسبت زیادہ ہوا ہے تو ایسے وقت میں ہمارے جیسے کارکن کیا احتجاج کا حق بھی نہیں رکھتے ۔ ہمارا آپ سے ایک سوال ہے ہم جماعت میں آپ کی خوشامد کے لیے آئے تھے ۔ ہ میں ہمارے قائد راجہ فاروق حیدر خان نے یہ پالیسی تو نہیں دی جس کا دامن ان سب بیماریوں سے پاک ہے ،ہ میں اپنے قائد پر فخر ہے نہ اس کا دامن ان بیماریوں سے آلودہ ہے اور نہ اس کے بچے ایسے کاموں میں دلچسپی رکھتے ہیں ۔ ہمارا قائد جرات سے ہر موضوع پر لب کشائی کرتا ہے ۔ ہماری ساری مثبت تنقید کا مقصد آپ کو اس مشن پر کھڑا رکھنا ہے جس کا آپ نے الیکشن سے پہلے عوام کے ساتھ وعدے کیے تھے آپ کی سیاست اسی صورت کامیاب ہو سکتی ہے جب آپ اپنے منشور پر قائم رہیں گے اور سیاست تب خدمت ہو گی جب آپ عوام سے سچ بولیں گے ۔ میرٹ قائم کریں گے، لوگوں کے درمیان انصاف کریں گے، لوگوں کو تحفظ دیں گے اور اپنے اختیارات کا مثبت استعمال کریں گے ۔ حلقے کے تمام معاملات اپنے بچے کے حوالے کرنے کی بجائے خود دیکھیں گے کیونکہ ووٹ کی امانت لوگوں نے آپ کے بچوں کے لیے نہیں بلکہ پارٹی کا امیدوار سمجھ کر دیے تھے اور ایک آخری بات جب آپ سب یونین کونسلز میں یکساں تعمیراتی فنڈز کا استعمال کریں گے تو ہم جیسے ورکر بھی آپ کے حق میں لکھیں گے اور حلقے بھر کے نوجوان بھی آپ کے کاموں کو سہرائیں گے ورنہ راجہ صاحب یہ سیاست آپ کی بچی کھچی ساکھ بھی لے ڈوبے گی ۔ مسلم لیگ ن اوورسیزکے کارکنان نے مزیدکہاکہ اب بھی آپ کے پاس وقت ہے اپنے ناراض لوگوں کو جمع کر کے اعتماد میں لیں اور ان کی پگڑیاں اچھالنے والے مالشیوں پالشیوں کو شٹ اپ کال دیں کیونکہ وقت اپنے ساتھ چلنے والوں اور وقت کے ساتھ فیصلہ کرنے والوں کو ساتھ چلاتا ہے اور سوچنے والوں کی ٹرین ہمیشہ چھوٹ جاتی ہے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں