کڑتی موضع بنگ پربننے والی کوٹلی یونیورسٹی،جب تک لوگوں کوانکی جائز ایڈ جسٹمنٹ نہیں ملتی تب تک کام شروع کرنے نہیں دیاجائیگا،چوہدری انورشہزاد

کوٹلی(اے جے کے نیوز)کڑتی موضع بنگ پربننے والی کوٹلی یونیورسٹی،جب تک لوگوں کوانکی جائزایڈجسٹمنٹ نہیں ملتی تب تک کام شروع کرنے نہیں دیاجائیگا ۔ ٹھیکیدارکواپنے روزانہ کے اخراجات کی فکرکرنے لگا ۔ یونیورسٹی کے نمائندے پروجیکٹ ڈائریکٹرمبشربھی ٹھیکیدارکے ہمدردبننے لگے ۔ ا ان خیالات کا اظہارسیاسی وسماجی شخصیت ،تحریک انصاف آزادکشمیریوتھ کے رہنماچوہدری انورشہزادنے کیا ۔ انہوں نے کہاکہ کڑتی موضع بنگ پربننے والی کوٹلی یونیورسٹی کوٹھیکیدارکے روزانہ 60 ہزاراخراجات کی فکرہے مگرعوام علاقہ کی کوئی پرواہ نہیں ۔ ستم ظریفی کی انتہایہ ہے کہ یونیورسٹی کے نمائندے پراجیکٹ ڈائریکٹرمبشرکوبھی ٹھیکیدارکی فکرستانے لگی جبکہ انہیں عوام علاقہ کےلئے قبرستان،سڑکات اورکھیل کے میدان کی فکرہونی چاہیے ۔ چوہدری انورشہزادنے دوٹوک الفاظ میں مزیدکہاکہ ٹھیکیدارنے ٹھیکہ لیاہے اب اجلت میں اسکانقصان 60 ہزارہویا ایک لاکھ جب تک کورٹ سے کیس فارغ نہیں ہوجاتے ،لوگوں کوانکی جائزایڈجسٹمنٹ نہیں ملتی تب تک کچھ بھی ہوجائے کام نہیں ہوگا ۔ عوام کی جائزایڈجسٹمنٹ تک ایک کے بعدایک رٹ کرینگے اورعدالت کادروازہ کھٹکھٹاتے رہیں گے ۔ ٹھیکیدارکواپنافائدہ ٹھیکہ لینے سے پہلے دیکھناچاہیے تھا ۔ ہم تمام متعلقہ اداروں کوکہتے ہیں کہ ہ میں ٹھیکیدارکے فائدے،نقصان کیلئے راست اقدام پرمجبورنہ کیاجائے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں