ایونکا ٹرمپ کی نازیبا تصویر منظر عام پر آگئی صدر ٹرمپ آگ بگولہ

نیو یارک (ویب ڈیسک) اقوام متحدہ کی 74 ویں جنرل اسمبلی کا اجلاس امریکی شہر نیو یارک میں جاری ہے جہاں دنیا بھر کے سربراہان مملکت و حکومت اپنے اپنے وفود کے ساتھ موجود ہیں ۔عالمی سفارتکاری کے اس اجتماع میں ہر کوئی سفارتی آداب کے حوالے سے انتہائی محتاط نظر آرہا ہے لیکن ایسے میں امریکی صدر
ڈونلڈ ٹرمپ کی صاحبزادی ایوانکا ٹرمپ انتہائی قابل اعتراض لباس پہن کر آگئیں۔ڈونلڈ ٹرمپ کی مشیر کی حیثیت سے کام کرنے والی ایوانکا ٹرمپ نے منگل کے روز اقوام متحدہ کی بین المذاہب ہم آہنگی کی تقریب اور اس کے بعد خواتین کے ایک پروگرام میں شرکت کی۔ اس دوران ایوانکا ٹرمپ انتہائی غیر سفارتی لباس پہنے نظر آئیں۔ایوانکا ٹرمپ نے اپنے سوشل میڈیا اکاﺅنٹس (ٹوئٹر، انسٹاگرام) پر ’ویمنز گلوبل ڈویلپمنٹ اینڈ پراسپیریٹی انیشی ایٹو ‘ میں شرکت کے موقع پر لی گئی تصاویر شیئر کی ہیں۔ ایوانکا ٹرمپ کی تصاویر امریکی صدارتی محل وائٹ ہاﺅس کی جانب سے بھی جاری کی گئی ہیں جن کو دیکھتے ہی لوگوں کا غصہ ساتویں آسمان پر پہنچ گیا ہے۔ان تقریبات کے موقع پر ایوانکا ٹرمپ نے نیلے رنگ کا ٹاپ اور پنسل سکرٹ زیب تن کی تھی لیکن شاید وہ ٹاپ کے نیچے کا مخصوص لباس پہننا بھول گئیں جس کی وجہ سے بھرپور سفارتی ماحول میں وہ انتہائی غیر سفارتی نظر آئیں۔ایوانکا ٹرمپ کی تصاویر سامنے آنے کے بعد نہ صرف انہیں بلکہ ان کے والد ڈونلڈ ٹرمپ کو بھی کڑی تنقید کا سامنا ہے۔ لوگوں نے صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی 2011 میں ایک کانگریسی رکن کے اسی قسم کے لباس کے بارے میں کی گئی ٹویٹ کے سکرین شارٹس شیئر کرنا شروع کردیے ہیں۔خیال رہے کہ برنی فرینک امریکی کانگریس کے وہ پہلے رکن تھے جنہوں نے بطور ہم جنس پرست اپنی شناخت ظاہر کی تھی، جب وہ کانگریس میں اپنے ہم جنس پرست ہونے کا بیان دے رہے تھے تو انہوں نے بھی نیلے رنگ کی شرٹ پہن رکھی تھی جس میں ان کے ساتھ بھی وہی کچھ ہوا تھا جو گزشتہ روز ایوانکا کے ساتھ ہوا ہے۔ صدر ٹرمپ نے اس وقت برنی فرینک کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے ا ن کے رویے کو توہین آمیز قرار دیا تھا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں