مولاناسیدابوالاعلیٰ مودودی کوقادیانیوں کو غیرمسلم قراردلوانے پرحکومت نے انہیں پھانسی کی سزاسنائی لیکن عملدرآمدکیوں ہوسکا,جانئے

جہانیاں(آن لائن) جماعت اسلامی پاکستان کے بانی مولانا سیّد ابو الاعلیٰ مودودی ؒ کا 40واںیوم وفات 22ستمبر اتوار کو منایا جائے گااس سلسلے میںجہانیاںسمیت ملک بھر میں جماعت اسلامی کے زیر اہتمام تقریبات منعقد کی جائیں گی جس میںمولانا سیّد ابواعلیٰ مودودی ؒکی عظیم مذہبی خدمات کو خراج عقیدت پیش کیا جائے گا۔مولانا سیّد ابواعلیٰ مودودی ؒ کا پاکستان کی سیاست میں اہم کردار رہا ہے۔ قادیانیوں کو غیر مسلم قرار دلوانے پر حکومت کی جانب سے انہیں پھانسی کی سزا سنائی گئی تھی جس پر عالم اسلام کے دبائو کے باعث عملدرآمد نہ ہو سکا۔مولانا کی شاندار دینی خدمات پر
انہیں شاہ فیصل ایوارڈ سے نوازا گیا۔سیّد مودودی کی تحریر کردہ قرآن مجید کی تفسیر ’’ تفہیم القرآن ‘‘ کے نام سے دنیا بھر کے اسلامی ممالک میں مشہور ہے جس کا انگریزی،عربی ،فارسی،فرانسیسی،جرمن،بنگالی،ہندی ،جاپانی سمیت 22سے زائد زبانوں میں تراجم شائع ہو چکے ہیں جبکہ سعودی عرب،سوڈان، اور مصر سمیت متعدد اسلامی ممالک کی یونیورسٹیوں میںمولانا مودودی کی تصانیف نصاب تعلیم میں شامل ہیں۔جہانیاں شہر کو یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہاں کی ہر دلعزیز شخصیت گورنمنٹ بوائز ڈگری کالج جہانیاں میں شعبہ اردو کے استاد پروفیسر ڈاکٹر جاوید اصغر نے ’’ مولانا مودودی بطور مفسر ‘‘ مقالہ تحریر کرکے پی ایچ ڈی کی ڈگری حاصل کی ہے ۔مولانا مودودی ؒ 22ستمبر1979ء کو 76برس کی عمر میں امریکہ میں انتقال کر گئے تھے۔آپ کا جسد خاکی پاکستان لایا گیا تھا جسے نماز جنازہ کے بعد سپردخاک کر دیا گیا ۔ ‎

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں