میرپور تعلیمی بورڈ پرچہ آوٓٹ کیس، ملزمان گرفتار

میرپور (راجہ قیصر افضل) تعلیمی بورڈمیرپور پرچہ آوَٹ کیس ، نامزدملزمان کی ضمانتیں منسوخ ، احاطہ عدالت سے گرفتار ۔ تفصیلات کے مطابق آزادجموں وکشمیرتعلیمی بورڈ میرپور کے امتحان انٹرمیڈیٹ پارٹ اول سالانہ 2019ء کا پرچہ کیمسٹری اورشماریات جوکہ مورخہ 23-05-2019کو ہوناتھا، کی بابت کنٹرولرامتحانات کالجزپروفیسرعتیق الرحمن کو 2-05-2019 2کوبذریعہ واٹس ایپ میسج علم ہواکہ اگلی صبح کو ہونے والے پرچہ جات آ وَٹ کردیئے گئے ہیں جس کی بابت بورڈانتظامیہ نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے ان دونوں پرچہ جات کو منسوخ کرتے ہوئے فوری طورپر میرپورسے آزادکشمیر بھر میں ٹی میں روانہ کیں تاکہ اس مرکزکی نشاندہی ہوسکے جہاں سے پرچے آوَٹ ہوئے ۔ بورڈکی ایک ٹیم ڈگری کالج ڈنہ مظفرآباد پہنچی ۔ ٹیم نے ڈگری کالج ڈنہ میں موجودسوالیہ پرچہ جات کے لفافوں کاجائزہ لیاتو معلوم ہواکہ پرچے اس مرکزسے آوَٹ کئے گئے ہیں ۔ اس پر پروفیسرعتیق الرحمن کنٹرولرامتحانات کالجز کی مدعیت میں ناظم مرکز، نائب ناظم مرکز اورڈگری کالج ڈنہ کے چوکیدارکے خلاف ;707382; کٹوائی گئی تاہم نامزدملزمان جن میں ناظم مرکزراجہ محمدانصرلائبریرین گورنمنٹ انٹرکالج بھیڑی مظفرآباد ، محمدمجید خان صدرمعلم گورنمنٹ مڈل سکول بانڈی شاہدرہ مظفرآباد اورمحمدنصیرچوکیدارگورنمنٹ ڈگری کالج ڈنہ مظفرآباد شامل تھے ، نے ضمانت قبل ازگرفتاری کروالی ۔ مورخہ 22-08-2019 کو عدالت ایڈیشنل سیشن جج مظفرآباد نے بعدازسماعت بحث تینوں ملزمان کی ضمانتیں منسوخ کردیں اورملزمان کو احاطہ عدالت سے گرفتارکرلیاگیا ۔ اس کیس میں بورڈکی طرف سے آزادکشمیر کے نامور قانون دان طاہرعزیزخان ایڈووکیٹ اورچوہدری اسلم رضا ایڈووکیٹ نے پیروی کی ۔ دریں اثناء تعلیمی حلقوں ، اورسول سوساءٹی نے بورڈکی تاریخ میں پرچہ آوَٹ کیس کے نامزدملزمان کی گرفتاری پر اطمینان کا اظہارکرتے ہوئے توقع کا اظہارکیاہے کہ واقعہ کے مرتکب افراد کو قرارواقعی سزادی جائے گی تاکہ آئندہ کوئی ایسی گھناوَنی حرکت کا ارتکاب نہ کرسکے اورآزادجموں وکشمیرتعلیمی بورڈمیرپور جیسے قومی ریاستی ادارے ( جس کے ساتھ آزادکشمیرکے لاکھوں بچوں کا مستقبل وابستہ ہے) سے کھلواڑکرنے کا دوبارہ سوچ بھی نہ سکے ۔ عوامی ، تعلیمی ، سیاسی وسماجی حلقوں نے بورڈانتظامیہ کی بروقت کارروائی اورملوث ملزمان کے خلاف کیس کی موثر پیروی کو بھی سراہاہے ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں