ناڑسے پکڑے گے جعلی پولیس اہلکاران کس کی زیرسرپرستی دندناتے پھرتے تھے, راجہ اقبال اورراجہ شفیق نے بڑا انکشاف کر دیا

لندن(اے جے کے نیوز)سابق امیدوار اسمبلی حلقہ چڑھوئی راجہ اقبال اور چیئرمین مسلم لیگ ن اوورسیز و میڈیا ایڈوائزر راجہ شفیق احمد خان نے اپنے مشترکہ بیان میں کہا ہے کہ حلقہ چڑھوئی کے نواحی علاقہ بلیری ناڑ میں جعلی پولیس اہلکاران کی خطرناک اسلحے، پولیس وردیوں ، بیجز اور پولیس گاڑی سمیت گرفتاری انتظامیہ، پولیس اور دیگر قانون نافذ کرنے والے اداروں کیلئے ایک لمحہء فکریہ اور بڑا ٹیسٹ کیس ہے جس کی بڑے پیمانے پر تحقیقات عمل میں لائی جائیں اور عوام کو اس سازش کے پس پردہ عوامل سے آگاہ کیا جائے ۔ اس واقعہ پر اپنا ردعمل ظاہر کرتے ہوئے دونوں رہنماؤں نے کہاکہ پولیس اسٹیشن ناڑ کی حدود سے اتنے بڑے پیمانے پر اسلحے سمیت جعلی پولیس کا روپ دھارے 5 خطرناک ملزمان،جن کا تعلق پشاور کے علاقے کرک سے بتایا جارہا ہے، کی گرفتاری سے عوامی وسیاسی حلقوں میں بڑے پیمانے پر تشویش پیدا ہوئی ہے اور کئی کڑے سوالات نے جنم لیا ہے ۔ خاص طورپر اس تاثر نے سیاسی و عوامی حلقوں کے اندر تشویش میں گہرا اضافہ کیا ہے کہ ان خطرناک ملزمان کواسمبلی میں قائد حزب اختلاف اور ان کے بیٹوں کی پوری سرپرستی اور معاونت حاصل رہی جن کی شہہ پر وہ پورے حلقے میں کئی روز سے دندناتے پھرتے رہے اور عوام کو ہراساں کرنے کی کوشش کرتے رہے جو ایک نہایت مجرمانہ اور ناقابل تلافی طرزعمل ہے ۔ انہوں نے کہا کہ قائد حزب اختلاف کا عہدہ ریاست میں عزت و وقار کی علامت سمجھا جاتارہا ہے لیکن بدقسمتی سے اس عہدے پر فائز حلقہ چڑھوئی کے ممبر اسمبلی نے اس عہدے کی آڑ میں عوام کے اندر خوف وہراس، دھونس اور رعب ودبدبہ قائم کرنے اور عوام کو ہراساں کرنے کی ناکام کوشش شروع کر رکھی ہے جس میں انہیں ناکامی ہوگی ۔ انہوں نے کہا کہ ہم سیاست میں روادارانہ اور پرامن سیاس کلچر پر یقین رکھتے ہیں لیکن اگر کوئی اس فضا کو خراب کرنے کیلئے غیر اخلاقی و غیرقانونی ذراءع استعمال کرنے کی کوشش کرے گا تو ہم سختی سے اس کا جواب دیں گے اور اس سازش کو ناکام بنادیں گے اور عوام کو کسی بھی صورت جرائم پیشہ گروہ اور ان کے سرپرستوں کے رحم وکرم پر نہیں چھوڑیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ اس سے قبل بھی حلقے میں کلاشنکوف کلچر موصوف نے متعارف کرایا اور پرامن فضا کو اپنے منفی مقاصد کی تکمیل کے لیے خراب کیا اور آج پھر ان کے آس پاس حفاظت پر مامور اسلحے سمیت ملزمان کی گرفتاری موصوف کے ناپاک اور منفی عزائم کا پتہ دے رہے ہیں لیکن ہم نہ تو اس طرزعمل کو برداشت کریں گے اور نہ ہی کسی کو اس طرح کی بدمعاشی یامن مانیوں کی اجازت دیں گے ۔ انہوں نے انتظامیہ اور پولیس سے مطالبہ کیا کہ وہ گرفتار ملزمان کیخلاف سخت ترین کارروائی عمل میں لائیں اور ان کے عزائم اور اصل سازش عوام کے سامنے بے نقاب کریں ۔ انہوں نے ایس ایچ او ناڑ فیصل صدیق کو کامیاب کارروائی کت ذریعے خطرناک ملزمان کی گرفتاری پر خراج تحسین پیش کیا اور کہاکہ فیصل صدیق اور ان کی ٹیم نے خطرناک ملزمان کی اسلحے اور دیگر ساز وسامان سمیت گرفتاری عمل میں لا کر ریاست کے اندر بڑی تباہی کا منصوبہ ناکام بنایا ہے جس پر حکومت انہیں خصوصی اعزازات سے نوازے ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں