انٹراپارٹی الیکشن کانعرہ ہوائی ثابت،جماعت کی صدارت کیلئے اہلیت نہیں بلکہ پاکستانی زعماء کی خوشنودی درکارہے،سابق امیدوار اسمبلی حلقہ چکسواری

چک سواری(مرتضیٰ عطاری سے)چودھری عبدالرحمن ایڈووکیٹ سابق اُمیدواراسمبلی حلقہ2چک سواری اسلام گڑھ ومرکزی چیف آرگنائزرپی ٹی آئی نظریاتی آزادکشمیر نے کہاہے کہ تبدیلی سرکارکانعرہ کہ کشمیرکے فیصلے کشمیر میں ہوں گے ہوائی ثابت ہوا اورپی ٹی آئی کشمیرکہنے والے بھی اندرونی فیصلوں کے لیے بھی پاکستان کے محتاج ہیں ۔ یہ بات ثابت ہوچکی ہے کہ پی ٹی آئی کا آزادکشمیر میں عملاًکوئی وجودنہیں ہے ۔ بیرسٹرسلطان محمودچودھری یہ حقیقت جان چکے ہیں کہ جماعت کی صدارت کے لیے کارکردگی اوراہلیت نہ بلکہ پاکستانی زعماء کی خوشنودی درکارہے اورانہوں نے کامیابی کے ساتھ اپنے مقصدکوحاصل کرلیاہے ۔ ان خیالات کا اظہارانہوں نے آزادپریس کلب چک سواری کے صحافیوں سے خصوصی بات چیت کرتے ہوئے کیا ۔ چودھری عبدالرحمن ایڈووکیٹ نے کہاکہ تبدیلی سرکارنے نعرہ لگایاتھاکہ انٹراپارٹی انتخابات کے بعدکارکنان کے مرضی کے مطابق جماعتی عہدے دیے جائیں گے مگرایک مرتبہ پھرتبدیلی سرکاراپنے قول سے پھرچکی ہے اورآزادخطہ میں موجودنظریاتی کارکن جنہوں نے ابتدائی دنوں میں جماعت کومتعارف کروایاسے کسی نے پوچھناتک گوارہ نہ کیا ۔ انہوں نے کہاکہ جماعتی عہدے داران کے موجودہ نوٹیفکیشن کے مطابق یہ بات ڈھکی چھپی نہیں رہی کہ ریاست میں موجوددیگرسیاسی جماعتوں اورتبدیلی کانعرہ لے کرعوامی عدالت میں آنے والی پی ٹی آئی میں کوئی فرق نہیں رہا ۔ کارکنان کی مرضی کے خلاف عہدے تقسیم کرکے آزادکشمیر میں پی ٹی آئی کوختم کرنے کی کامیاب سازش کی گئی ہے اورعوامی اقتدارکاخواب دیکھنے والے کارکنان کوایک مرتبہ پھرمایوس کردیاگیاہے جس کے بھیانک نتاءج بہت جلد سب دیکھ لیں گے ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں