انوارالحق کاپی ٹی آئی نے انتخاب کیوں کیا ; کشمیرتحریک انصاف کاصدرکون ہوگا;با اثر وفاقی شخصیت نے پوری ذمہ داری کےساتھ بتادیا

کوٹلی(وجدان یوسف جنگیال سے)آزادکشمیر میں پی ٹی آئی کی صدارت بارے روزبروزبڑھتی افواہیں زیرگردش ہیں ۔ سابق صدرکشمیرتحریک انصاف بیرسٹرسلطان محمودچوہدری کے حامی کھل کرمنظرعام پر ۔ بیرسٹرسلطان کے حامی آئے روزاخبارات اورسوشل میڈیاپرکشمیرتحریک انصاف کی صدارت اورآزادکشمیرکے آمدہ الیکشن میں پی ٹی آئی کی جیت پربیرسرسلطان محمودچوہدری کووزیراعظم آزادکشمیربھی نامزدکرنے پرکھل کرسامنے آچکے ہیں ۔ جس پراے جے کے نیوزنے ایک با اثروفاقی شخصیت سے رابطہ کیا ۔ اے جے کے نیوزنے بیرسٹرسلطان محمودچوہدری اورانوارالحق کے مستقبل بارے جب سوال پوچھاتوبا اثروفاقی شخصیت نے چندماہ بعدآنے والے فیصلہ پرکھل کربات کی اورایسے قبل ازوقت حقائق بیان کردیئے کہ آزادکشمیر میں تحریک انصاف کے کارکنان کیلئے لائن صاف ہوگئی، جوپارٹی ڈسلپن کیلئے بھی ضروری ہے ۔

با اثروفاقی شخصیت نے انوار الحق کے مستقبل بارے سچ پرمبنی حقائق بیان کردیئے ۔ تفصیلات کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کی با اثروفاقی شخصیت سے جب اے جے کے نیوزنے بیرسٹرسلطان محمودچوہدری اورانوارالحق کے مستقبل بارے سوال کیاتوانہوں نے کہاکہ ایک بات صاف الفاظ میں آزادکشمیرتحریک انصاف کے کارکنان نوٹ کرلیں کہ آزادکشمیر میں پارٹی صدارت کاسہرا انوارالحق کے سرسجے گا اوراگرآزادکشمیرکے آمدہ الیکشن میں تحریک انصاف کی حکومت بنی تووزیراعظم بھی انوارالحق ہونگے ۔ آزادکشمیرکے عوام کابہت استحصا ل کیاگیاہے کبھی انہیں بلاول ہاءوس اورکبھی رائیونڈکامریدبنایاجاتاتھا ۔ عوام کواپنے فوائدکیلئے استعمال کیاجاتارہا ۔ ہمیشہ وزیراعظم بننے کیلئے اعلیٰ قیادت کوبلیک میل بھی کیاجاتارہا ۔ پیپلزپارٹی اورن لیگ کوکچھ اشخاص نے یرغمال بنایاہواہے نوجوانوں کوآگے آنے کاموقع نہیں دیاجاتاہے ۔ آزادکشمیر میں پی ٹی آئی نوجوانوں کوموقع دے گی ۔ نوجوان ہی ملک کاسرمایہ اورمستقبل ہیں ۔ پی ٹی آئی کی شروع سے یہی پالیسی ہے کہ پارٹی کویرغمال نہ بننے دیاجائے ۔ پارٹی میں کارکنان کومقام دیاجائے اورکارکنان کی آوازاورمرضی کے مطابق فیصلے کیے جائیں ۔ آزادکشمیرکے عوام ہمارے لیے قابل احترام ہیں ۔ ہماری یہی کوشش ہے کہ آزادکشمیر میں لوٹنے والوں کاکڑا احتساب ہواورپارٹی کی قیادت وہ لوگ کریں جنہیں عوام با آسانی اپروچ کرسکیں کیونکہ حکمران کاکام عوام کے مسائل حل کرناہے ۔ اگرپارٹی قیادت تک عوام کوپہنچنے کیلئے مالشیوں اورپالشیوں کے تلوے چاٹنے پڑیں تویہ پی ٹی آئی کی اعلیٰ قیادت کسی صورت برداشت نہیں کرسکتی اورنہ ہی یہ پی ٹی آئی کامنشورہے ۔ کارکنان اعلیٰ قیادت پربھروسہ رکھیں اوراپنے آپ کومتنازعہ نہ بنائیں جوفیصلے ہونگے وہ عوام کی مرضی اوران کے حق میں بہترہونگے ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں