پاکستان،مسافر بیرون ملک جاتے ہوئے اپنے ساتھ کتنی رقم لے جا سکتے ہیں اور کن چیزوں پر پابندی ہے

ایف بی آر نے بیرون ملک سفرکرنے والے شہریوں کیلئے ہدایا ت جاری کردی ہیں جن میں اپنے ساتھ لے جانے والی رقم اور دیگر اہم معلومات فراہم کی گئیں ہیں ۔ایف بی آر کی جانب سے مسافروں کیلئے جاری معلومات میں کہا گیاہے کہ سٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق تمام مسافر جو بیرون ملک سفر کر رہے ہیں ان پر لازم ہے کوہ درج ذیل قوانین پر عمل کرتے ہوئے اپنے پاس موجود زرمبادلہ مندرجہ ذیل کے مطابق باضابطہ مطلع کریں ۔ بیرون ملک سفر کرنے والا فرد جس کی عمر پانچ سال ہے وہ اپنے ساتھ زیادہ سے زیادہ ایک ہزار ڈالر لے جا سکتا ہے جبکہ سالانہ اسے 6 ہزار ڈالر ساتھ لے جانے کی اجازت ہو گی ، پانچ سال سے 18 سال کے مسافر کو اپنے ساتھ پانچ ہزار ڈالر تک لے جانے کی اجازت ہے جبکہ وہ سالانہ 30 ہزار ڈالر اپنے ساتھ بیرون ملک لے جاسکتا ہے ۔18 سال سے زائد عمر کے مسافروں کی اپنے ساتھ لے جانے والی رقم کی حد 10 ہزار ڈالر ہے تاہم وہ سالانہ 60 ہزار ڈالر تک رقم اپنے ساتھ بیرون ملک لے جا سکتا ہے ۔اس کے علاوہ بیرون ملک سفر کیلئے سونا، چاندی ، ہیرے اور جوہرات اور تین ہزار سے زائد پاکستانی کرنسی لے جانے کی اجازت نہیں ہو گی ۔ایف بی آر کی جانب سے جاری کردہ معلومات میں بتایا گیاہے کہ مسافر کیلئے اپنے ساتھ بیرون ملک نوادرات ، آثار قدیمہ سے متعلق اشیاء، نشہ آور اشیا ء، ملکی مفادات کے خلاف لٹریچر ، قابل اعتراض مواد ، جعلی اور نقلی اشیاء، ٹاکسک کیمیکل ، وزارت دفاع کے این او سی کے بغیر ہتھیار ، اسلحہ یا بارودی سامان لے جانا ممنوع ہے 

021-99248807  وزیراعظم پاکستان کی خصوصی ہدایات کی روشنی میں سی آر سی سیل قائم کیا گیاہے اگر آپ کو محکمہ کسٹم سے متعلق کوئی بھی شکایات ہوں تو مندرجہ ذیل نمبر پر ابطہ کر یں:

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں