برطانیہ،پاکستانی نوجوان نے دوخواتین کوجنسی زیادتی کانشانہ بناڈالا

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) برطانیہ میں ایک پاکستانی ’اوبر‘ ٹیکسی ڈرائیور نے ایک ہفتے میں 2خواتین مسافروں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔ میل آن لائن کے مطابق نوید اقبال نامی ملزم خود اوبر ٹیکسی نہیں چلاتا تھا بلکہ اس کا بڑا بھائی اوبر ٹیکسی ڈرائیور تھا۔ چند ہفتے قبل جب اس کا بڑا بھائی پاکستان چلا گیا تو نوید اقبال نے اس کی اوبر ایپلی کیشن کی لاگ اِن تفصیل حاصل کی اور اس کے اکاﺅنٹ سے ٹیکسی چلانی شروع کر دی۔ پہلے اس نے لیڈز شہر میں 33سالہ ایلی ڈولبی نامی خاتون کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جو سٹی سنٹر میں اپنی دوستوں کے ساتھ اپنی سالگرہ منا کر نکلی تھی۔
ایلی نے باہر آ کر اوبر کال کی اور 41سالہ نوید اقبال اسے پک کرنے پہنچ گیا۔ ایلی شراب کے نشے میں تھی جس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے نوید اقبال نے راستے میں اس پر جنسی حملہ کر دیا۔ اس کے 5روز بعد اس نے 22سالہ روزی ونسٹن کو اپنا شکار بنایا۔ جب وہاس کی ٹیکسی میں بیٹھی تو ملزم ٹیکسی کو ایک ویران علاقے میں لے گیا اور وہاں روزی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بناڈالا۔ رپورٹ کے مطابق جب یہ واقعات پولیس کو رپورٹ ہوئے تو ملزم کے بھائی کا لائسنس معطل کر دیا گیا اور اس کی تلاش شروع کر دی گئی حالانکہ وہ خود پاکستان میں موجود تھا۔ بعد ازاں تحقیقات میں پولیس کو حقیقت کا علم ہوا جس پر اصل ملزم نوید اقبال کو حراست میں لے لیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں