کھلاڑیوں نے کپتان کیخلاف قرآن پاک پرہاتھ کرحلف دیا،اہم کھلاڑی نے قومی ٹیم کے حوالے سے بڑا انکشاف کردیا

کراچی (اے جے کے نیوز)  جادوگر سپنر سعید اجمل نے انکشاف کیا ہے کہ 2009 میں چیمپیئنز ٹرافی کے دوران کپتان یونس خان کے خلاف لڑکوں نے قرآن پاک پر حلف لے کر گروپ بندی کی۔

نجی ٹی وی اے آر وائی نیوز کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے سعید اجمل نے کہا کہ 2009 میں یونس خان کپتان تھے لیکن کھلاڑی انہیں پسند نہیں کرتے تھے کیونکہ ان میں غصہ زیادہ تھا۔ جنوبی افریقہ میں چیمپیئنز ٹرافی کے دوران کھلاڑیوں نے کپتان یونس خان کے خلاف قرآن پاک پر حلف دے کر گروپ بندی کی، بعد میں منیجر یاور سعید کے پاس بھی یہ رپورٹ گئی۔

انہوں نے کہا میں سب سے جونیئر تھا ، یونس خان نے مجھے کمرے میں بلایا اور گروپ بندی کے حوالے سے پوچھا۔ ’میں نے قرآن پاک پر حلف دیا ہے کہ میں کسی کو نہیں بتاﺅں گا لیکن سوچنے کی بات یہ ہے کہ یہ بات تین منٹ کے بعد میڈیا پر کیسے چل گئی؟ کسی نے تو حلف کی خلاف ورزی کی‘۔

سعید اجمل نے کہا کہ کپتان کے خلاف گروپ بندی کے موقع پر اس کمرے میں 10 سے زیادہ بندے تھے، میں سب سے جونیئر تھا اور مجھے ڈرا دھمکا کر اپنے ساتھ ملایا گیا، مجھے کہا گیا کہ اگر تم ہمارے گروپ کا حصہ نہیں بنتے تو تمہیں ٹیم سے باہر نکال دیں گے۔

پروگرام کے میزبان کی جانب سے گروپ بندی میں شریک کھلاڑیوں کے نام پوچھنے کی کوشش کی گئی لیکن سعید اجمل اپنے حلف کی پاسداری کرتے ہوئے نظر آئے، اسی لیے انہوں نے کسی بھی کھلاڑی کا نام نہیں لیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں