باغ،حساس ادارے کے نوجوانوں کا چاردیواری کاتقدس پامال،مردوں اور خواتین پربے پناہ تشدد

باغ(اے جے کے نیوز)باغ کے نواحی گاءوں تھب کے رہائشی حبیب الرحمن کے گھرپرسپاہی جہانگیراقبال کالاٹھیوں ،ڈنڈوں ،پتھروں سے اپنے دیگرساتھیوں کے ہمراہ حملہ،جس کے نتیجے میں حساس ادارے کے ساپی جہانگیراقبال اوراس کے ساتھیوں نے چارافراداوردوخواتین کوشدیدزخمی کردیاجس میں حبیب الرحمن،اسدمحمودشدیدزخمی ہوئے ۔ حبیب الرحمن کوسر میں 21 ٹانکے اوراسدمحمودکو8 ٹانکے لگے جن کوشدیدزخمی حالت میں باغ ڈسٹرکٹ ہسپتال پہنچادیاگیا ۔ متاثرہ خاندان کے رہنماحبیب الرحمن نے میڈیاسے گفتگوکرتے ہوئے کہاکہ آرمی کے سپاہی جہانگیراقبال جوسرکاری زمین جنگل میں مکان تعمیرکررہاتھاہم نے منع کیاکہ یہ سرکاری اراضی ہے اورہمارے مال مویشی کی چاراگاہ ہے آپ یہاں مکان نہ بنائیں تواس نے اپنے دیگردرجنوں ساتھیوں سمیت ہمارے گھرپرحملہ کیا اورجس میں ہماری خواتین اوربچوں کوبھی شدیدزخمی کیا ۔ جس پرعوام علاقہ نے مداخلت کرتے ہوئے ہماری جان بچائی اورہ میں فوری طورپرڈی ایچ کیوہسپتال باغ میں لایاگیاہم نے جہانگیرکے نام باغ تھانہ میں درخواست دی جس پرپولیس نے بروقت کارروائی کرتے ہوئے جہانگیراقبال اوراس کے تین بھائیوں کوگرفتارکیا اورتین دن تک باغ تھانہ میں رہے اوربعدازاں بروقت میڈیکل رپورٹ نہ ملنے کی وجہ سے تینوں ملزمان تھانہ سے رہاہوگئے اوراس کے بعدباغ تھانہ میں ابھی تک کوئی ایف آئی آردرج نہ ہوسکی ۔ انہوں نے وزیراعظم آزادکشمیرراجہ فاروق حیدر،جی اوسی مری ودیگراعلیٰ حکام سے اپیل کی کہ جہانگیراقبال اوراس کے ساتھیوں کوگرفتارکرکے ان کوسخت سزادی جائے بصورت دیگرہم خواتین سمیت وزیراعظم ہاءوس کے سامنے تادم مرگ بھوک ہڑتال کرنے پرمجبورہونگے جس کی تمام ترذمہ داری حکومت آزادکشمیرپرعائدہوگی ۔ 

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں