ایک لیٹرپرحکومت کتناٹیکس وصول کررہی ہے;جان کرآپ سرپکڑلینگے

اسلام آباد (آئی این پی، این این آئی) سینیٹ میں حکومت نے اعتراف کیا ہے کہ پٹرول پر 36.34، ڈیزل پر 47.17، مٹی کے تیل پر 19.6، لائٹ ڈیزل پر 14.12 روپے فی لیٹر ٹیکس اور چارجز وصول کئے جارہے ہیں۔دیا مر بھاشا ڈیم کی تعمیر کیلئے گزشتہ حکومت نے رواں مالی سال کیلئے بجٹ میں 23 ارب 68 کروڑ روپے مختص کئے تھے، نیلم جہلم سرچارج 30 جون کے بعد ختم کردیا جائے گا اور اس کے بعد بجلی کے بلوں کے ذریعے نیلم جہلم سرچارج وصول نہیں کیا جائے گا، رواں سال بجلی چوری سے 30 کروڑ سے زائد کا نقصان ہوا، بجلی چوری میں 291 ملازمین ملو ث پائے گئے جن کے خلاف کارروائی کی گئی، پاکستان سٹیزن پورٹل میں 13 اپریل 2019ءتک 6 لاکھ 20 ہزار 558 شکایات موصول ہوئیں، جن میں سے 4 لاکھ 65ہزار 562 شکایات حل ہوئیں۔سینیٹر راحیلہ مگسی کے سوال کے جوا ب میں وزارت پٹرولیم نے اپنے تحریری جواب میں ایوان کو آگاہ کیا کہ پٹرول کی قیمت خرید 62روپے 56پیسے اور قیمت فروخت 98روپے 89 پیسے فی لٹر ہے۔ ڈیزل کی قیمت 70 روپے 26 پیسے اور قیمت فروخت 117 روپے 43 پیسے فی لٹر۔ اسی طرح مٹی کے تیل یکی قیمت خرید 69 روپے 65 پیسے اور قیمت فروخت 89روپے 31 پیسے فی لٹر ہے۔ لائٹ ڈیزل آئل کی قیمت خرید 66 روپے 44 پیسے اور قیمت فروخت 80 روپے 54 پیسے فی لٹر ہے۔ پٹرول پر فی لٹر ٹیکسز کی مد میں 26 روپے 50 پیسے اور ڈسٹری بیوشن اینڈ ٹرانسپورٹیشن کاسٹ کی مد میں 9 روپے 84 پیسے فی لٹر وصول کئے جارہے ہیں۔ ہائی سپیڈ ڈیزل پر فی لٹر 39 روپے 96 پیسے فی لٹر ٹیکسز اور ڈسٹری بیوشن اینڈ ٹرانسپورٹیشن کاسٹ کی مد میں 7 روپے 21 پیسے فی لٹر وصول کی جارہی ہے، مٹی کے تیل پر 15 روپے 86 پیسے فی لٹر ٹیکس اور 15 روپے 86 پیسے ڈسٹری بیوشن اینڈ ٹرانسپورٹیشن کاسٹ کی مد میں وصول کیے جارہے ہیں۔ اسی طرح لائٹ ڈیزل آئل پر 11 روپے 72 پیسے فی لٹر ٹیکسز وصول کئے جارہے ہیں جبکہ لائٹ ڈیزل آئل پر 2 روپے 38 پیسے فی لٹر ڈسٹری بیوشن اینڈ ٹرانسپورٹیشن کاسٹ بھی لی جارہی ہے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں