302

لاہورمیں دونوجوان بہنوں کو30 سے زائدمردوں نے سرعام جنسی ہراسگی کانشانہ بناڈالا

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک) لاہور میں گزشتہ دنوں دو نوجوان بہنیں ایک ’سولس فیسٹیول‘ (Solis Festival)میں گئیں جہاں ان کے ساتھ جنسی ہراسگی کا انتہائی شرمناک واقعہ پیش آ گیا۔ ویب سائٹ ’پڑھ لو‘ کے مطابق موسیقی اور آرٹس کا یہ فیسٹیول ’اویسس گولف اینڈ ایکوا ریزارٹ‘ میں منعقد ہوا جہاں 30کے لگ بھگ مرد ان دونوں بہنوں کے پیچھے پڑ گئے اور کھلے عام انہیں جنسی ہراسگی کا نشانہ بناڈالا۔

ان دونوں بہنوں میں سے ایک کا نام لیلیٰ تھا جس نے انسٹاگرام پر اپنے ساتھ پیش آنے والے اس افسوسناک واقعے کے متعلق بتایا ہے۔ اس نے لکھا ہے کہ ”جب ہم وہاں پہنچیں تو ہم نے دیکھا کہ وہاں زیادہ تر لڑکے ہی تھے۔ تاہم میں اس بات پر زیادہ حیران نہیں ہوئی کیونکہ پاکستان میں اس طرح کے مواقع پر زیادہ لڑکے ہی ہوتے ہیں۔ہر کوئی ہمیں گھور رہا تھا اور یہ بھی کوئی بڑی بات نہیں کہ ہمارے ہاں یہ روزمرہ کی بات ہے لیکن پھر دو درجن سے زائد لڑکوں نے ہمیں گھیر لیا اور ہم پر فقرے کسنے شروع کر دیئے۔“

لڑکی نے لکھا ہے کہ ”سب سے پہلے مجھے ایک لڑکے نے پیچھے سے پکڑ لیا، جب میں نے مڑ کر دیکھا تو اس نے کہا کہ وہ سکیورٹی گارڈ ہے۔ ہمارے ساتھ میرا ایک دوست لڑکا بھی تھا،میں نے اسے بتایا اور اس نے جب اس لڑکے سے پوچھا تو وہ ایسے ظاہر کر رہا تھا جیسے وہ واقعی سکیورٹی گارڈ ہو۔ اس کے بعد کئی اور لڑکوں نے بھی یہی حرکت کی۔ ہمارے ساتھ آئے لڑکے نے ہمیں بچانے کی بہت کوشش کی لیکن وہ کتنے لوگوں کو روکتا، وہاں تو 30سے زائد لڑکے ہمارے پیچھے پڑے ہوئے تھے۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں