ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں یونس آرائیں نے مشتاق نوابی اور دیگرکے سارے معاملات کاکچھا چھٹا کھول دیا

کوٹلی (اے جے کے نیوز)آزادکشمیرکی تاریخ کے سب سے بڑے منشیات کے مقدمے جس میں اربوں روپوں کی ہیروئین مشتاق نوابی ،اسکا بیٹا حافظ ساجد نوابی ،داماد حافظ منصور دیگر کاررندوں کی مدد سے برطانیہ ،دبئی،ساوتھ افریقہ اور دیگر ممالک میں لیدر کی جیکٹوں ،شیمپو کی بوتلوں ،ڈیکروشین پیسوں اور دیگر طریقوں سے اسمگل کرتے تھے کے مقدمہ میں وعدہ معاف بننے والے اہم ترین گواہ ’’یونس آرائیں ‘‘ نے ایڈیشنل سیشن جج کی عدالت میں مشتاق نوابی کے منشیات اور دیگر معاملات کا سارا کچھ چھٹا کھول کر رکھ دیا ،مشتاق نوابی اور اسکے لڑکوں نے میرے سامنے کم از کم 500کلو گرام ہیروئین برطانیہ اسمگل کر چکا ہے یہ ظالم لوگ ہیں میں 36لاکھ کے قرضے میں ڈوبا ہوا تھا اس مشتاق نوابی نے کہا کہ میرے ساتھ کام کرو تمہارا سارا قرضہ میں اتاروں گا مجبور تھامگر اب اچھے برے کی تمیز آگئی ہے،وعدہ معاف بننے والے گواہ سے مشتاق نوابی کے وکلاء،راجہ جاوید اختر، راجہ مسعود اور شیخ نعمان دو گھنٹے تک بھری عدالت میں وعدہ معاف گواہ پر ’’جرح ‘‘ کرتے رہے مگر یونس آرئیں نے سب کچھ عدالت کو بتا دیا یونس آرائیں کے عدالتی بیان کے بعد مشتاق نوابی ،حافظ ساجد نوابی اور دیگر ملزمان کے گرد گھیرا مزید تنگ ہونا شروع ہو گیااور مشتاق نوابی وغیرہ کے سزایابی کے امکانات بڑھ گئے ہیں، ادھر دوسرے منحرف ہونے والے گواہ خالد قصاب کے انکار کرنے پر عدالت نے دفعہ 337,338کے تحت خالدقصاب کو ملزم قرار دیتے ہوئے اسکے خلاف قانونی کاروائی کرنے کے احکامات جاری کر دیے یونس آرائیں کے عدالتی بیان کے بعد کھلبلی مچ گئی یونس آرئیں نے عدالت کو بتایا کہ میرے قرضے کے 16لاکھ روپے حافظ ساجد نوابی نے اتارے اور اس کے بدلے مجھ سے یہ سارے کام لیتا رہا ہے میرا ضمیر مطمہن ہے اور میں اپنے کیے پر شرمندہ ہوں اللہ تعالی مجھے معاف کرے عدالتی وقت ختم ہونے پر مقدمے کی سماعت کل پر رکھ دی گئی ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں