136

میجرمنصفدادمرحوم سے منسوب اپوزیشن لیڈرکاحالیہ بیان خلاف حقائق، بے بنیاداورسستی شہرت کاحصول ہے ،راجہ شفیق

 برطانیہ(اے جے کے نیوز) چیئرمین مسلم لیگ ن اوورسیز میڈیا ایڈوائزر راجہ شفیق نے کہا ہے کہ میجرمنصفداد مرحوم سے منسوب اپوزیشن لیڈر کا حالیہ بیان خلاف حقائق اور بے بنیاد ہے جس کامقصد سستی شہرت کا حصول ہے ۔ صحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ میجر منصفداد مرحوم ایک فہم و فراست کے حامل ایک سیاسی و عوامی رہنما تھے جو عوام کی تائید وحمایت کے ساتھ اسمبلی میں پہنچے تھے جن کی کامیابی ان کی شخصیت پر عوامی اعتماد کا اظہار برملا اظہار تھا ۔ میرے خیال میں میں ان کی وفات کے بعد ان سے متعلق بے بنیاد اور خلاف حقائق بیانات منسوب کرنا محض سستی شہرت کا حصول اور عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے کے مترادف ہے جس کو باشعور عوام خوب سمجھ سکتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ عوام کا حافظہ اتنا بھی گیا گذرا نہیں کہ وہ حقائق کا ادراک نہ کر سکیں ۔ چڑھوئی کے عوام بہتر طور پر جانتے ہیں کہ حلقے میں کس نے کیا گل کھلائے اور عوامی محرومیوں کے خاتمے کے لیے کس کا کیا کردار رہا ۔ اپنے مذموم مقاصد کی تکمیل کے لیے قبیلائی تعصبات کے بیج کس نے بوئے ، کلاشنکوف کلچر کو رواج کس نے دیا اور پسند و ناپسند کی بنیاد پر مخصوص برادریوں کو نوازنے اور دوسرے قبائل کے حقوق پر شب خون مارنے کی روایت کس نے ڈالی جس کا خمیازہ آج حلقے کے عوام بھگت رہے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ ہم سیاست میں رواداری کے قائل ہیں لیکن اس کا یہ مطلب بھی نہیں کہ ہم اپنے قائدین اور بزرگوں پر بے بنیاد کیچڑ اچھالنے کی اجازت دے دیں ۔ ہم عزت دار لوگ ہیں ، عزت کرنا بھی جانتے ہیں اور عزت کروانا بھی ۔ میرا خیال ہے کہ ہر کسی کو سوچ سمجھ کر اور دوسروں کی عزت نفس کا خیال رکھ کر بیانات دینے چاہیئں اور ان قائدین سے متعلق بات کرنے سے اجتناب برتنا چاہیئے جو اس دنیا میں نہیں ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ حلقے کے عوام سے کچھ بھی پوشیدہ نہیں ہے، ساری حقیقتیں سب پر آشکار ہیں، خلاف حقائق بیانات سے زمینی حقیقتیں کبھی بھی تبدیل نہیں ہو سکتیں ۔اس لیے ذیادہ مناسب ہو گا کہ پرامن فضا اور روادرانہ ماحول کو برقرار رکھا جائے اور اختلافی بیانات سے گریز کیا جائے ۔ انہوں نے آپس میں اتحاد و یکجہتی کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ یہ وقت کا تقاضا ہے کہ حلقہ میں سیاسی تبدیلی کے لیے سرگرم تمام دوست اپنی ذاتی رنجشیں اور سطحی مفادات کو ایک طرف رکھ کر ایک پیج پر آئیں اور متفقہ لائحہ عمل ترتیب دیں

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں