226

آزادکشمیر،پانچ سالہ معصوم بچی کیساتھ زیادتی کرنیوالے ملزم کے تہلکہ خیزانکشافات

چکار ( تحصیل رپورٹر )چکار کے نواحی علاقے شرقی کھاوڑہ کاانوش جاوید بدفعلی کیس پولیس نے بدفعلی کیس کے مبینہ ملزم احتشام عرف بحری کا تین روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کرلیا ۔ ملزم احتشام عرف بحری نے بدفعلی کا اعتراف جرم کرتے ہوۓ مزید سنسنی خیز انکشافات کردیے ۔ ملزم احتشام نے کہا میں نے معصوم انوش جاوید کو جبرا اپنے گھر لیجاکر بدفعلی کا نشانہ بنایا انوش کی چیخ وپکار اور اسکی حالت غیر ہونے پرفرار ہوا ۔ میں اپنے کیے پر شرمندہ ہوں ۔ مجھے میری گندی سنگت نے اس مقام تک پہنچایا احتشام نے میڈیا پرسننز کو بتایا کٹکیر گاؤں میں چند لڑکے جو میرے ساتھی ہیں اسی قسم کی غیر اخلاقی حرکات میں ملوث ہیں ۔ احتشام نے کہامیں گورنمنٹ بوائز ہائی سکول کٹکیرمیں آٹھوں جماعت کا طالبعلم ہوں امسال میں نے ساتویں جماعت کا امتحان پاس کیا ۔ دو دفعہ امتحان سے فیل بھی ہوا ۔
انوش جاوید بدفعلی کیس کے تفتیشی آفیسر نے میڈیا پرسن سے گفتگو کرتے ہوۓ کہا ملزم احتشام کا تین روزہ جسمانی ریمانڈ حاصل کر لیا ہے ابتدائی پوچھ گچھ کے دوران ہی بغیر کسی جسمانی تشددکے ملزم احتشام نے سب کچھ اگلتے ہوۓ بدفعلی کا اعتراف جرم کر لیا ہے ۔ ملزم جسمانی طور پر کمزور لیکن انتہائی چالاک اور شاطر ہے ۔ احتشام بالغ اور بدفعلی کی صلاحیت رکھتا ہے مزید حقائق اسکی میڈیکل رپورٹ سے عیاں ہو جائیں گیں انوش کے میڈیکل کا پراسیس مکمل ہے چند دن کے اندر رپورٹ موصول ہو جاۓ گی ۔ انوش جاوید اور اسکی متاثرہ فیملی کو انصاف ضرور ملے گا ۔
سول سوسائٹی أور قانونی ماہرین نے انوش جاوید کے مقدمے کی FIR کے اندراج پر سوالات اٹھاتے ہوۓ کہا ایف آٸ آر میں دفعہ 12زیڈ اے کا اضافہ کیا جاۓ ملزم نے بچی کے ساتھ جبرا بدفعلی کا ارتکاب کیا یے تاکہ اس جنسی وحشی درندے کو قرار واقعی سزا دلواٸ جاۓ اسکے اگر دفعات کا اضافہ نہ کیاگیا تو اسکا فائدہ ملزم احتشام کو ہوگا ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں