1,411

راجہ ریاست کاسکندرحیات کو کرارا جواب،ایک کروڑروپے سکندرحیات کو کس جگہ دیئے تھے؟موصوف نے پیسے کس کوگننے کیلئے دیئے تھے؟

کوٹلی (اے جے کے نیوز)سابق امیدوار اسمبلی حلقہ چڑھوئی سابق چئیر مین ضلع زکوۃ کمیٹی راجہ ریاست نے کہا ہے۔عزت کے لئے سیاست کرتا ہوں۔عہدوں کے لئے نہیں۔جب میں نے زبان کھلولی تو شہر کے پتھر بھی میرے ساتھ بولیں گئے۔ عزت کرتاہوں اس کو میری کمزوری نہ سمجھیں۔راجہ اکرم مرحوم ،میجر منصف داد مرحوم،کپٹن سرفراز مرحوم اور کرنل راجہ نسیم مرحوم کا سیاسی قاتل کون ہے؟؟؟سب جانتے ہیں۔سردار سکندر حیات خان کو آج تک میں نے اپنا بزرگ ہی سمجھا ہے مجھے مجبور نہ کرے میں آپکے گھر کا بھیدی ہوں راجپوت نسل سے تعلق رکھتا ہوں ۔جس سے وفا کرتا ہوں قبر تک کرتا ہوں مگر جب راجپوت کی عزت پر بات آجائے تو یہ راجہ ریاست تمام کشتیاں جلا کر اپنے سیاسی مخالفین کا قبر تک پیچا نہیں چھوڑتا ہے مگر مجھ پر ایک کروڑ روپے کا الزام لگا کر پتا نہیں انھوں نے کیا ثابت کرنے کی کوشش کی ہے میں سیاست عزت کی خاطر کرتا ہوں اور جس دن یہ سمجھا کہ میری سیاست میں عزت نہیں ہے اسی دن سیاست کو خیر آباد کہہ جاؤ نگا مگر اپنی عزت پر کسی بھی صورت میں حرف نہیں آنے دوگا میں کچھ ثبوت اگھٹے کر رہا ہوں آنے والے چند ہی دنوں میں کچھ دھماکہ خیز انکشافات کرو گا جس میں دودھ کا دودھ پانی ہو جائے گا ،چڑھوئی کے عوام کا محافظ ہوں جت جان میں جان ہے اہلیان چڑھوئی کا تحفظ کرو گا باتیں میرے پاس بھی بہت ہیں اور جب کھولوں گا تو پورے آزادکشمیر کے عوام میں بونچھال آجائے گا میں نے اگر حالیہ الیکشن نہیں لڑا تھا تو اس کی بنیادی وجہ صرف اور صرف پارٹی ڈسپلن وزیراعظم راجہ فاروق حیدر خان اور راجہ نصیر تھے جنھوں نے مجھے مجبور کیا تھا یہ بات ریکارڈ پر ہے کہ میں نے الیکشن ہر صورت میں لڑنا تھا یہ میں بتاؤ گا کہ ایک کروڑ روپے کس کے حوالے کیے گئے تھے کون سردار سکندر حیات خان کے پاس لے کر گیا تھا ؟اس وقت سردار سکندر حیات خان نے کس کو پیسے گننے کے لیے دیے تھے؟پیسے کس جگہ پر دیے گئے تھے؟اور یہ ایک کروڑ روپیہ کتنے دنوں تک سردار سکندر حیات خان کے پاس رہے ہیں ؟؟َاور بعد میں کس سازش کے تحت کیا ہوا کس شخصیت نے پھر دوبارہ سکندر حیات خان کے ساتھ ڈیل کی ؟ساری دنیا جانتی ہے کہ میرے پاس کروڑ روپیہ نہیں ہے اب وقت آگیا ہے کہ آزادکشمیر کے عوام کے سامنے کچھ ایسے چہرے بھی لائے جائے جو ہم جیسوں کو ڈرا دھمکا کر نیچا دکھانے کی ناکام کوششوں میں مصروف تھے مگر اب وقت تبدیل ہو گیا ہے سیاست میں وہی نام کمائے گا جو اپنے حلقہ میں محنت کرے گا میری پریس کانفرنس کا آپ میڈیا والے انتظار کرے ۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں