486

وہ باتیں جو اکثرعورتیں شرم کی وجہ سےچھپا جاتی ہیں

دنیا بھر میں موجود خواتین کی خواہشات اگرچہ مختلف ہوتی ہیں لیکن جو کچھ وہ اپنے شریک سفر سے چاہتی ہیں اس سے وہ اکثر غافل دکھائی دیتے ہیں۔خواتین چونکہ فطرتاً شرمیلی واقع ہوئی ہیں اس لئے اپنے جنسی تعلق کے متعلق اپنے شریک حیات سے بات کرنے میں عار محسوس کرتی ہیں ۔دوسری جانب اب تک مردوں کے لئے خواتین کو جنسی تعلق میں طمانیت پہنچانا ہی معمہ بنا ہوا ہے۔رپورٹ کے مطابق بیشتر مرد خواتین کے انزال کے متعلق ابہام اورپر اسراریت کا شکار ہیں۔تاہم حال ہی میں سلویا نامی 27سالہ خاتون نے اس اہم مگر پیچیدہ مسئلے کے حل کیلئے ایک بلاگ لکھنا شروع کیا ہے ۔واضح رہے سلویا بذات خود غیر مطعمئن جنسی تعلق کے تجربے سے گزر چکی ہیں۔انکا کہنا ہے کہ وہ اس بلاگ کے ذریعے خواتین و حضرات کے ان مسائل کے خاتمے کی کو شش کریں گی۔حال ہی میں انھوں نے 72نا معلوم خواتین کو اپنے بلاگ پر اپنے جنسی تجربات اور اپنی طمانیت کے بارے میں اظہار خیال کی دعوت دی۔رپورٹ کے مطابق حیران کن حد تک خواتین نے اپنے خیالا ت شیئر کرنے میں دلچسپی دکھائی اور اپنے اپنے تجربات شیئر کیے۔تاہم بیشتر خواتین کا کہنا تھا کہ وہ اپنے ساتھی کو شرمندگی سے بچانے کے لئے انزال کے متعلق ہمیشہ جھوٹ کا سہارا لیتی ہیں۔بلاگ پر مضمون نویسی میں حصہ لینے والی 72خواتین میں سے ایک خاتون کا کہنا تھا کہ انکے شوہر جنسی تعلق قائم کرتے ہوئے ہمیشہ ان کے جذبات کو سمجھنے میں غلطی کرتے ہیں تاہم وہ شرم کے باعث ہمیشہ انکی غلطی کو درست کرنے سے قاصر رہتی ہیں۔علاوہ ازیں بہت سی خواتین کا کہنا تھا کہ وہ اپنے شوہر کے ساتھ جنسی تعلق اور انزال کے متعلق تبالہ خیال کرنے میں ہمیشہ ناکام رہتی ہیں۔تاہم سلویا اس بات پر یقین رکھتی ہیں کہ عورت ہمیشہ اپنے ساتھی کو خوش رکھنا چاہتی ہے جس کے باعث وہ اس اذیت کو ہنسی خوشی قبول کر لیتی ہے۔انھوں نے کہا کہ خواتین بھی مردوں کی طرح اس خوبصورت رشتے کا حقیقی لطف اٹھانا چاہتی ہیں جو انکا حق بھی ہے ۔انکا مزید کہنا تھا کہ مردوں کو بھی خواتین کی خواہشات کا احترام کرنا چاہیے اور ان سے اس معاملے پر تبادلہ خیال کرتے ہوئے اس مسئلے کو حل کرنا چاہیے۔علاوہ ازیں سلویا بہت حد تک پر امید ہیں کہ بہت جلد معاشرے میں تبدیلی واقع ہو گی، اور مرد اپنی خواتین سے انکی خواہشات کے بارے میں کھلے ذہن کے ساتھ تبادلہ خیال کریں گے ، نہ صرف تبادلہ خیال کریں گے بلکہ انکی خواہشات کا احترام بھی کریں گے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں