511

اگرآپ کے بچے یہ دوAPPLICATIONS استعمال کرتے ہیں توفوری طورپر ڈیلیٹ کروادیں

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) ٹنڈر(Tinder)اور گرنڈر (Grinder)نامی ایپلی کیشنز بالغ مردوخواتین کے لیے بنائی گئی ہیں جس کے ذریعے ہر طرح کے جنسی رجحان رکھنے والے لوگ اپنی ذہنیت کے حامل لوگوں کی تلاش کر سکتے ہیں لیکن ان ایپلی کیشنز کے متعلق اب ایک ہوشربا انکشاف سامنے آ گیا ہے۔ میل آن لائن کے مطابق برطانیہ میں ان ایپلی کیشنز کے ذریعے 2015ءسے اب تک 70 سے زائد بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا جا چکا ہے۔ پولیس کی تحقیقات کے مطابق یہ ایپلی کیشنز صارفین پر عمر کی حد لاگو کرنے میں بری طرح ناکام ہو رہی ہے جس کی وجہ سے کم عمر بچے بھی ان پر اکاﺅنٹ بنا رہے ہیں اور بچوں سے جنسی زیادتی کرنے والے درندوں کے ہتھے چڑھ رہے ہیں۔

پولیس حکام کا کہنا ہے کہ ”ان ایپلی کیشنز کے ذریعے جن بچوں کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا گیا ان میں سے بعض کی عمر 8سال تک تھی۔ ایک 13سالہ بچے کو جنسی درندوں کے ایک گروہ نے ٹنڈر کے ذریعے اپنے چنگل میں پھنسایا اور کم از کم21مردوں نے اس بچے کو زیادتی کا نشانہ بنایا۔ ٹنڈر اور گرنڈر کے علاوہ دیگر آن لائن ڈیٹنگ پلیٹ فارمز بھی بچوں کے جنسی استحصال کے لیے استعمال ہو رہے ہیں۔ کم عمر لوگ ایپلی کیشن پر اکاﺅنٹ بناتے ہوئے اپنی عمر زیادہ درج کرکے سسٹم کو چکمہ دینے میں کامیاب ہو جاتے ہیں اور پھر بچوں میں جنسی رغبت رکھنے والے بدطینت افراد کے ہتھے چڑھ جاتے ہیں۔“

اس حوالے سے برطانیہ کے وزیربرائے ڈیجیٹل، کلچر، میڈیا اینڈ سپورٹ جیرمی رائٹ کا کہنا تھا کہ ”پولیس کی رپورٹ دیکھ کر مجھے شدید جھٹکا لگا۔ میں رپورٹ میں بتائی گئی تمام سوشل میڈیا کمپنیوں کو لکھوں گا اور پوچھوں گا کہ وہ بچوں کے تحفظ کے حوالے سے کیا اقدامات کر رہی ہیں۔اگر ان کے جوابات تسلی بخش نہ ہوئے تو ان کے خلاف قانونی اقدام اٹھایا جائے گا۔“

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں