چندشرپسندعناصرمرتضیٰ عطاری کے صحافتی فرائض سے خوفزدہ ہوکربے بنیادالزام تراشی کررہے ہیں،چوہدری عابدعلی

چک سواری(شہزادعظیم سے)چودھری عابدعلی عابدانچارج سوشل میڈیاونگ پیپلزپارٹی آزادکشمیرحلقہ2چک سواری اسلام گڑھ نے کہاہے کہ آزادپریس کلب چک سواری ایک معیاری صحافتی پلیٹ فارم ہے جہاں سے عوام علاقہ کی بے لوث خدمت ہورہی ہے۔اس صحافتی قافلے نے ہمیشہ علاقائی مسائل کے حل کے لیے اپنامثبت کرداراداکیااورہرقسم کے تعصب سے بالاترہوکرحق اورسچ کاساتھ دیا۔کچھ عرصہ قبل علاقے میں ڈیرہ جمائے جعلی پیروں کے خلاف آزادپریس کلب چک سواری کے صحافیوں نے جوقلمی جہادکیااُس کی ا س سے قبل نظیرنہیں ملتی۔اس کے ساتھ ساتھ بے شمارایسی مثالیں موجودہیں جن میں آزادپریس کلب چک سواری کے صحافیوں نے غیرجانبدار رہتے ہوئے حقائق کوبے نقاب کیااورجان ومال کے نقصان کی پرواہ کیے بغیر صحافتی ذمہ داریاں احسن اندازمیں سرانجام دیں۔سابق صدرپریس کلب محمدمرتضیٰ عطاری میرے نہ صرف اچھے دوست بلکہ چھوٹے بھائیوں کی طرح ہیں۔نیکی وبھلائی کے کاموں میں ہمیشہ محمدمرتضیٰ عطاری نے بڑھ چڑھ کرحصہ لیا اورجب بھی کسی اجتماعی کام کے لیے آوازدی انہوں نے لبیک کہا۔چندمالی طورپرمضبوط لیکن شرپسندعناصرمحمدمرتضیٰ عطاری کے صحافتی کام سے خائف ہوکراُن پربے بنیادالزام تراشی کررہے ہیں اورمخالفت میں اخلاقی حدیں بھی پھلانگ چکے ہیں۔مخالفت محمدمرتضیٰ عطاری کی نہیں بلکہ اچھائی اوراچھے کام کی ہورہی ہے جس کی جتنی مذمت کی جائے کم ہے۔میری ہمدردیاں،تعاون اوردعائیں محمدمرتضیٰ عطاری کے ساتھ ہیں۔سیاست دانوں اورعوامی راہ نماؤں پرتنقیدہوتی رہتی ہے بلکہ حقیقت میں وہ خرابیوں کی نشان دہی ہوتی ہے جس کی اصلاح کرانامقصودہوتا ہے لیکن صحافتی اصلاحی کوششوں کوذاتی عنادبناکرصحافیوں کے خلاف گھیراتنگ کرناکسی سیاست دان کوزیب نہیں دیتا۔اگرایسی کوئی بات ہوئی توبطورسیاسی کارکن احتجاج میں اپنابھرپورکرداراداکروں گا۔ان خیالات کااظہارانہوں نے آزادپریس کلب چک سواری کے دورہ کے موقع پرصحافیوں سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔چودھری عابدعلی عابدنے5فروری یومِ یکجہتی کشمیرکے حوالہ سے اپنے پیغام میں کہاکہ بانی پاکستان قائداعظم محمدعلی جناح کے فرمان کے مطابق کشمیرپاکستان کی شہ رگ ہے اورپاکستانی حکمرانوں اورسیاست دانوں کوشہ رگ کی حفاظت کرنی چاہیے۔قائدعوام ذوالفقارعلی بھٹونے کہاتھاکہ کشمیرکی جنگ ہزارسال تک بھی لڑنی پڑی تولڑیں گے۔بطورکشمیری ہماراپاکستان سے رشتہ کلمہ طیبہ کی بنیادپرہے اورگذشتہ نصف دہائی سے زائدعرصہ سے کشمیری تکمیل پاکستان کی جنگ لڑرہے ہیں۔اگرکشمیری الحاق پاکستان کی بجائے خودمختاری کاراستہ اختیارکرتے توشایدبھارتی غیض وغضب اس قدرنہ ہوتاجیساکہ اب ہے اس لیے پاکستان کوہرمحاذپرکشمیریوں کی حمایت کے ساتھ ساتھ کشمیرکی آزادی کے لیے جدوجہدتیزکرناہوگی۔اس موقع پرآزادپریس کلب چک سواری کے صدرقاضی جہانگیراحمد،سابق صدرمحمدمرتضیٰ عطاری،سینئرنائب صدرمدثرنذر،سیکرٹری جنرل شہزادعظیم،مہربان حسین،محمداعجازصارم،صبرشیرازچودھری،چودھری سہیل طارق ودیگرموجودتھے۔#

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں