کیاآپ جانتے ہیں حضرت محمدصلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے بدن میں چندایسی خصوصیات تھیں جودوسرے انسانوں میں موجودنہیں ہیں؟

کوٹلی(www.dailyajknews.com) پہلی خصوصیت یہ تھی کہ ہمیشہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی جبین مبارک سے نورچمکتارہتاتھاجورات کے وقت چاندکی ماننددرودیوارکوروش رکھتاتھاجیساکہ روایت ہوئی ہے کہ ایک رات بی بی عائشہؓ کی سوئی گم ہوگئی جیسے ہی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم حجرے میں داخل ہوئے فوراً انہیں سوئی مل گئی۔اس کے علاوہ ایک تاریک رات میں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے اصحاب کے ہمراہ کسی جگہ سے گزرناچاہتے تھے۔رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم نے اپنے ہاتھوں کوبلندکیاتوآپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی انگلیوں سے ایسانورنکلاکہ جس کی روشنی میں اصحاب راستہ گزرگئے۔دوسری خصوصیت یہ تھی کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم جہاں سے گزرتے دوروزتک وہاں سے ایسی خوشبوآتی کہ ہرگرزنے والااسے محسوس کرتاتھااورکوئی خوشبواس سے اچھی نہ تھی۔تیسری خصوصیت یہ تھی کہ جب سورج کے سامنے کھڑے ہوتے توآپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کاسایہ نہ ہوتاتھاکیونکہ وہ سرتاپاروح مجسم اورجسم منورتھے اورسوج کونورمطلق پرتصرف حاصل نہ تھاجبکہ آئمہ اطہاربھی یہی خصوصیت رکھتے تھے۔چوتھی خصوصیت یہ تھی کہ جب بھی سورج میں نکلتے توکسی پرندے کوسرکے اوپرسے گزرنے کی طاقت نہ ہوتی تھی۔پانچویں خصوصیت یہ تھی کہ آگے اورپیچھے دیکھنے میں کوئی فرق نہ ہوتاتھاجس طرح آگے دیکھتے تھے ویسے ہی پیچھے بھی دیکھتے تھے۔چھٹی خصوصیت یہ تھی کہ بدبوکاان تک گزرنہ تھا۔ساتویں خصوصیت یہ تھی کہ گندگی ان کے راستے سے دورہٹ جاتی تھی۔آٹھویں خصوصیت یہ تھی کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنالعاب دہن جس جگہ بھی ملتے بیمارکوشفامل جاتی تھی۔نویں خصوصیت یہ تھی کہ تمام لغات اورزبانوں سے آگاہ تھے اورلوگ جب زبان میں سوال کرتے اسی زبان میں آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے جواب حاصل کرتے تھے۔دسویں خصوصیت یہ تھی کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کادیکھاخواب اوربیداری میں یکساں تھا۔گیارہویں خصوصیت یہ تھی کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے دوش مبارک پرمہرنبوت تھی جس کے نورکے آگے سورج کی روشنی بھی ماندپڑجاتی تھی۔بارہویں خصوصیت یہ تھی کہ آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم ناف کٹے ہوئے اورختنہ شدہ تھے۔تیرہویں خصوصیت یہ تھی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم سے جوکچھ دفع ہوتاتھاخوشبوہوتی تھی اورکسی کونظرنہیں آتی تھی بلکہ زمین اسے نگل لیتی تھی۔چودہویں خصوصیت یہ تھی کہ قوت وشجاعت میں کوئی آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے مقابلے کانہ تھا۔پندرہویں خصوصیت یہ تھی کہ جہاں سے گزرتے پتھراورسنگریزے ادب سے سلام واکرام کرتے تھے۔سولہویں خصوصیت یہ تھی کہ ہرشخص کی سوچ،قصداورزینت سے آگاہ تھے۔سترہویں خصوصیت یہ تھی کہ مکھی اوردیگرحشرات کوآپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے جسم اطہرپربیٹھنے کی تاب نہ تھی۔اٹھارہویں خصوصیت یہ تھی کہ کفاراورمنافقین آپ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کودیکھتے ہی لرزہ براندام ہوجاتے تھے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں